کسی کے چھوڑ جانے سے،

کسی کے چھوڑ جانے سے،
سانسوں کی مالا کا،
دھاگا کب ٹوٹا ہے،
تو پھر یہ سوگ کیسا ہے!
یہ دل کا روگ کیسا ہے!
یہ کیسی آگ لگتی ہے!
یہ کیسا درد اُٹھتا ہے!
کہ مجھے کو چین نہیں آتا!
چلو اک کام کرتا ہوں،
وہ سب میں بھول جاتا ہوں،
ہاں میں اِک قبر بناتا ہوں،
کہ جس کے مقبرے پر میں،
تمھارا نام لکھتا ہوں،
تمھاری یادوں کے سائے،
میں اس میں دفن کرتا ہوں،
چلویہ فرض کرتا ہوں،
کہ تم کو بھول جاتا ہوں،
مگر یہ سب ناکارہ ہے،
تمھارے بن نا پہلے تھا،
نا اب میرا گزارہ ہے…

10341433_10152418985158291_5068466686713552246_n

Posted on May 24, 2014, in Urdu Poems and tagged , , , , . Bookmark the permalink. 1 Comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s