میں لوگوں سے ملاقاتوں کے

 

میں لوگوں سے ملاقاتوں کے 
لمحے یاد رکھتی ہوں 
میں باتیں بھول جاؤں تو 
لہجے یاد رکھتی ہوں 
سر محفل نگاہیں مجھ پر 
جن لوگوں کی پڑتی ہیں 
نگاہوں کے حوالے سے 
وہ چہرے یاد رکھتی ہوں 
ذرا سا ہٹ کے چلتی ہوں 
زمانے کی روایت سے 
کہ جن پر بوجھ میں ڈالوں
وہ کندھے یاد رکھتی ہوں 

57937_10151182486388291_226474252_n

Posted on December 26, 2013, in Urdu Poems and tagged , , , . Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s