سنا ہے یاد کرتے ہو

سنا ہے یاد کرتے ہو
کے جب بھی شام ڈھلتی ہے
ہجر میں جان جلتی ہے 
تم اپنی رات کا اکثر
سکوں برباد کرتے ہو
سنا ہے یاد کرتے ہو ..
کے جب پنچھی لوٹ آتے ہیں
غموں کے گیت گاتے ہیں
” سنو تم لوٹ آؤ نا “
یہی فریاد کرتے ہو
سنا ہے یاد کرتے ہو 
ستارے جب بھی فلک پے جگمگاتے ہیں 
وہ بیتے ہوے پل خوب رلاتے ہیں 
تم اس دم اپنی آنکھوں میں
مجھے آباد کرتے ہو
سنا ہے یاد کرتے ہو ..
مجھے تم یاد کرتے ہو ؟؟

 
580851_10151182477248291_663093586_n

Posted on December 26, 2013, in Lovely Sad Poetry, Urdu Poems and tagged , , , . Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s