کبھی بارش برستی ہے

 

کبھی بارش برستی ہے 
تو مجھ کو یاد آتا ہے 
وہ اکثر مجھ سے کہتا تھا 
محبت ایک بارش ہے
سبھی پہ جو برستی ہے 
مگر پھر بھی نہیں ہوتی 
سبھی کے واسطے یکساں 
کسی کے واسطے راحت 
کسی کے واسطے زحمت
،
میں اکثر سوچتی ہوں اب
وہ مجھ سے ٹھیک کہتا تھا 
محبت ایک بارش ہے
سبھی پہ جو برستی ہے 
کبھی مجھ پہ بھی برسی تھی 
مگر میری لیے بارش
کبھی نہ بن سکی رحمت 
یہ راحت کیوں نہیں بنتی ؟
کبھی میں خود سے پوچھوں تو 
یہ دل دیتا دہائی ہے
،
کبھی کچے مکانوں کو بھی
بارش راس آئی ہے ؟

1044064_10151678363693291_194860410_n

Posted on December 18, 2013, in Urdu Poems and tagged , , , . Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s