میں نے پوچھا کیسے ہو ؟

 

میں نے پوچھا کیسے ہو ؟
بدلے ہو یا ویسے ہو ؟
روپ وہی انداز وہی 
یا پھر اس میں کوئی کمی ؟
ہجر کا کچھ احساس تو ہوگا 
کوئی تمہارے پاس تو ہوگا ؟
میں بچھڑا یہ مجبوری تھی 
کب منظور مجھے یہ دوری تھی 
ساتھ ہمارا کب چھوٹا ہے 
روح کا رشتہ کب ٹوٹا ہے 
آنکھ سے جو آنسو بہتے ہیں 
تم کو خبر کیا کہتے ہیں 
میں نے کہا آواز تمہاری 
آج بھی ہے ہمراز ہماری 
پھول وفا کے کھل جائیں گے 
اک دن ہم پھر مل جائیں گے…

1375173_10151901477523291_223854064_n

Posted on December 18, 2013, in Urdu Poems and tagged , , . Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s