بیٹھو گی تو پھر زندگی نہیں گزار سکو گی

کس نے کہا؟ کیوں کہا؟ کتنی تکلیف پہنچی؟کتنی بے عزتی ھوئی؟
اس سب کو بھول جاؤ۔۔یہ زندگی ہے۔اس میں بہت سارے لفظ بولے جاتے ہیں ۔بہت سارے لفظ سہنے پڑتے ھیں۔ بہت سارے لفظوں کے بہت سارے معنی ہوتے ھیں۔لفظوں کو اکٹھا کر کے تم انہیں سوچنے اور سمجھنے بیٹھو گی تو پھر زندگی نہیں گزار سکو گی۔۔۔۔۔۔۔”

عمیرہ احمد کے ناول”لا حاصل” سے اقتباس

1003148_10151701110883291_517078662_n

Posted on December 18, 2013, in Urdu Poems and tagged , , , . Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s