کسی سے بھی محبت تھی نہیں اس کو

کسی سے بھی محبت تھی نہیں اس کو
وہ اپنی ذات سے خود عشق میں مصروف تھا اتنا
اسے اطراف میں پھیلی محبت ڈھونگ لگتی تھی
وہ بس اپنی ہی خاطر زندگی کو جینا چاہتا تھا
بڑھایا ہاتھ جو میری طرف اس نے تو
میں محسوس کر بیٹھی ”اسے مجھ سے محبت ہے“
مگر تب بھی حقیقت میں کہیں ایسا نہیں تھاکچھ فقط
یہ ہی حقیقت تھی
وہ میری ذات میں اپنی خوشی کی جستجو میں تھا
کہ اس نے آنکھ میں میری دھنک سے رنگ دیکھے تھے
کہ اس کو لمس میں میرے مہکتے پھول ملتے تھے
کہ اس کی ہر خوشی ہر مسکراہٹ پر ،
جو اپنی جان دے دیتی وہ فقط میری ہی ہستی تھی
”اسے بس خود سے محبت تھی“
سو میری ان نگاہوں میں وہ تکتا تھا شبیہ اپنی
میں اس کی اک ذرا سی ضد کو
اس کا عشق سمجھی تھی
نہیں تھا عشق وہ اُس کا
فقط اک شائبہ تھا وہ محبت

1379519_10151678808205689_650918826_n

Posted on December 17, 2013, in Muhabbat and tagged , , , . Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s